نیوز چینلوں کی زینت بننے والے اور ٹی وی چینلوں کے ڈبیٹ میں جانے الے دہلی کے ائمہ مساجد کے خلاف دہلی وقف بورڈ نے سخت قدم اٹھانا شروع کردیاہے ۔ اس سلسلے میں پہلا اقدام کرتے ہوئے بورڈ کے چیرمین اور اوکھلا سے ایم ایل اے امانت اللہ خان نے ایک امام کو برطرف کردیاہے جبکہ دیگر ائمہ کے نام نوٹس جاری کی ہے ۔
روزنامہ انقلاب میں شائع ایک رپوٹ کے مطابق انڈیا گیٹ پر واقع مسجد کے امام مولانا اسد فلاحی کو دہلی وقف بورڈ نے برطرف کردیا ہے ۔ ان کے بارے میں نمازیوں کی شکایت تھی کہ وہ وقت کی پابندی کا بالکل خیال نہیں کرتے تھے اور نماز پڑھانے کے اوقات میں ٹی وچی چینلو ں پر موجود رہتے تھے ۔ اس کے علاوہ دیگرائمہ کے نام بھی نوٹس جاری کی گئی ہے کہ وہ نمازکے اوقات میں مسجد میں رہیں اور وقت کی پابندی کا خیال رکھیں ۔ غیر ضروری سرگرمیوں سے احتراز کریں ۔
واضح رہے کہ ملک کے مسلم عوام اور نوجوانوں میں ان علماءاور اسکالرس کے خلاف شدیدنارضگی پائی جاتی ہے جو ٹی وی چینلوں کے ڈبیٹ میں شرکت کرتے ہیں ۔ عوام کا ماننا ہے کہ علماءاور اسکالرس کو مسلمانوں سے متعلق کسی بھی ڈبیٹ میں شریک نہیں ہونا چاہیئے کیوں کہ وہاں پر علماءاور اسکالرس کے صحیح سے بات کرنے کا موقع نہیں دیاجاتاہے اور میڈیا محض اپنی ٹی آر پی کیلئے انہیں بلاتی ہے اور ایجنڈا کے مطابق استعمال کرتی ہے ۔
عام الیکشن کے نتائج آنے کے بعد کانگریس سمیت ملک کی چھ اپوزیشن پارٹیوں نے ٹی وی چینلوں کے ڈبیٹ کا بائیکاٹ کررکھاہے جس کی وجہ سے ان دنوں ڈبیٹ کا رنگ پھیکا پڑ چکاہے اور ٹی آر پی بھی کم ہوگئی ہے ایسے میں مولانا اور مسلم اسکالرس کو مدعو کرکے ٹی وی چینل ٹی آر پی بڑھانے کی کوشش کرتے ہیں اور مسلم علماءواسکالرس اس کے مسلسل شکار ہورہے ہیں ۔

بشکریہ ملت ٹائمز

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here